//

بلوچستان کی پہلی یوتھ پالیسی خوش آئند ہے تاہم اس پر مکمل عملدرآمد ضروری ہے، چیئرمین بلاول بھٹو

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب: چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی سربراہی میں وزیراعلی ہاؤس میں اجلاس ہوا۔

بلاول بھٹو زرداری کے ہمراہ وزیراعلی بلوچستان، پی پی پی بلوچستان کے صدر چنگیز جمالی، رکن قومی اسمبلی اعجاز جاکھرانی اور پالیٹکل سیکریٹری جمیل سومرو موجود تھے۔ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو بلوچستان میں بینظیر بھٹو اسکالر شپ پروگرام، پیپلز ائیر ایمبولینس اور پیپلز گرین بس سروس کے قیام اور صحت، تعلیم، امن و امان اور بجٹ سمیت مختلف فلیگ شپ پروگرام کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ کوئٹہ میں این آئی سی وی ڈی اور گمبٹ انسٹی ٹیوٹ آف لیور ٹرانسپلانٹ کے قیام، اسکل ورکرز کارڈ پروگرام اور ریسکیو 1122 سروس کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی۔ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں تعلیم کے ترقیاتی بجٹ میں 300 فیصد اضافہ کیا گیا۔ بلوچستان میں صحت کے ترقیاتی بجٹ میں 129 فیصد اضافہ کیا گیا۔

بلوچستان کے دورافتادہ علاقوں میں صحت کی سہولیات فراہم کرنے کے لئے ہیلتھ آن وہیلز پروگرام کا آغاز کردیا گیا۔ بلوچستان میں کینسر کے مریضوں کے لئے مفت ادویات کی فراہمی کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے۔ بلاول بھٹو کو بریفنگ میں مزید بتایا کہ بلوچستان میں 30 ہزار سے زائد زرعی ٹیوب ویلز کی سولر پر منتقلی کے منصوبے کا آغاز کردیا گیا ہے۔زراعت کی ترقی کے لئے بلوچستان کے کاشت کاروں کو سبسڈی پر ٹریکٹر فراہم کئے جائیں گے۔انٹرنیشنل ڈرائیونگ کی تربیت کے حوالے سے کچلاک میں مفت اسکول کے قیام کے حوالے سے بجٹ مختص کردیا گیا ہے۔ دریائے سندھ سے آنے والی کچھی کینال کے نئے فیز کی تعمیر کے لئے 10 ارب روپے مختص کردئیے گئے۔بلوچستان کے بیروزگار گریجویٹس کے لئے بلاسود قرضوں کی فراہمی کے لئے چار ارب روپے مختص کردئیے گئے۔ چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہ بھی بتایا کہ بلوچستان میں یوتھ اسکلز ڈولپمنٹ پروگرام کے تحت دو سالوں میں 30 ہزار نوجوانوں کو تربیت فراہم کرکے بیرون ملک روزگار کے مواقع فراہم کئے جائیں گے۔ دنیا کی 200 سے زائد یونیورسٹیوں میں سائنس کے مضامین میں پی ایچ ڈی کرنے والے بلوچستان کے طلبہ کو صوبائی حکومت اسکالرشپ دے گی۔

بریفنگ دینے کے بعد چئیرمین بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ بلوچستان کو امن کا مکمل گہوارہ بنانے کے لئے صوبے میں گراس روٹ لیول تک سیاسی عمل ضروری ہے۔دہشت گردوں کے عزائم کو ناکام بنانے کے لئے دہشت گردی کے بیانئے کو شکست دینا ہوگی۔بلوچستان کی پہلی یوتھ پالیسی خوش آئند ہے تاہم اس پر مکمل عملدرآمد ضروری ہے تاکہ نوجوانوں کو زیادہ سے زیادہ مواقع ملیں۔ چیئرمین بلاول بھٹو نے ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں سندھ کی طرز پر صحت کے منصوبوں کی فوری تکمیل جلد از جلد کی جائے۔بلوچستان میں 2022 کے سیلاب سے متاثرہ افراد کے لئے گھروں کی تعمیر کے منصوبے کی تکمیل میں تیزی لائی جائے۔ گوادر سے کوئٹہ اور سبی سے جعفر آباد تک پورے بلوچستان کے انفرااسٹرکچر کی بہتری کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کئے جائیں۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »