//

بلوچی زبان کے پہلے فلم ساز اور فنکار انور اقبال بلوچ کی تیسری برسی

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

(وش‌ویب‌)بلوچی زبان کے پہلے فلم ساز اور فنکار انور اقبال بلوچ کی آج تیسری برسی منائی جارہی ہے
یہ نامور فنکار یکم جولائی 2021 کو اس فانی دنیا سے رخصت ہوئے ۔ حاجی محمد اقبال بلوچ کے بیٹے انور اقبال بلوچ 25 دسمبر 1949 کو کراچی میں پیدا ہوئے۔
انور اقبال بلوچ وژنری گروپ کے چئیرمین احمد اقبال بلوچ اور وش نیوز کے سی ای او اویس اقبال بلوچ کے بڑے بھائی تھے۔
انور اقبال بلوچ پہلی بلوچی فلم حمل ءُ ماہ گنج کے تربیت کار تھے ، بلوچی زبان کی پہلی فلم ریلیز ہونے سے پہلے تنازعات کا شکار ہوگئی تھی جس نے بعد میں تاریخ رقم کردی ۔
انور اقبال کی بنائی گئی پہلی بلوچی زبان کی فلم اولی فلم ’حمل و ماہ گنج‘کو ریلیز ہونے میں 42 سال لگے۔ بلوچی میں فلم سازی پر اپنی کوشش پر انہیں ہمیشہ افسوس رہا مگر اداکاری کی دنیا میں انہوں نے اپنا سفر نہ روکا ، انور اقبال نے ٹی وی ڈراموں میں اپنے فن کا لوہا منوایا۔
اس فلم ءکے سب وسائل کے انتظام انور اقبال نے خود کئے ۔ فلم کی اسکرپٹ ظہور شاہ ہاشمی نے لکھی جوکہ بلوچی زبان کے نامور ادیب اور شاعر تھے ۔ اردو و بلوچی کے معروف شاعر عطا شاد نے بھی اس فلم کے 3 سے 4 گانے لکھے اور فتح محمد نذر نے ان کا طرز دیا ۔ 1974 میں اس فلم کی شوٹنگ شروع ہوئی ۔
2 مارچ سن 2017 میں بلوچ کلچر ڈے کے موقع پر فلم حمل ءُ ماہ گنج پہلی دفع بلوچی زبان میں نشر کی گئی ۔
انور اقبال بلوچ نے 70 اور 80 کی دہائی میں بہت سے ٹی وی ڈراموں میں کام کیا ۔ جن میں اردو کے ساتھ ساتھ سندھی زبان کے ڈرامے شامل ہیں ۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »