//

بلوچستان میں دہشتگردوں کے اڈے بنانے کا منصوبہ ناکام،کالعدم ٹی ٹی پی کمانڈرنصر اللّٰہ گرفتار

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب: کوئٹہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر داخلہ ضیاء لانگو نے بتایا کہ ہم ایک بڑی کامیابی کے بارے میں آگاہ کررہے ہیں.

قانون نافذ کرنے والے اداروں نے گزشتہ روز اہم آپریشن کیا، کارروائی میں اہم دہشتگرد کمانڈر کو گرفتار کیا گیا، دہشتگردوں کا اہم نیٹ ورک پکڑا گیا ہے۔ ضیاء لانگو نے کہا کہ ان تمام دہشتگردوں کے پیچھے بھارتی ایجنسی را کا ہاتھ ہے، ہمسایہ ملک ان دہشت گردوں کواپنی سرزمین پر پناہ دیتا ہے، ان دہشت گردوں کا اسلام سےدور دور تک کوئی تعلق نہیں۔انہوں نے کہا گرفتار کمانڈر نصراللہ شوری کا رکن ہے دفاعی کمیشن کا ممبر بھی رہا ہے، بعد ازاں انہوں نے دہشت گرد نسراللہ کا ویڈیو پیغام سنایا۔دہشت گرد نے اپنے بیان میں بتایا کہ میرا نام نصر اللہ ہے، میرا تعلق محسود قبیلے سے ہے، جنوبی وزیرستان سے میرا تعلق ہے کالعدم ٹی ٹی پی کی تشکیل سے پہلے میں تخریبی کارروائیوں میں حصہ لیتا رہا تھا، جب کالعدم ٹی ٹی پی وجود میں آئی تو میں شامل ہوگیا، اس طرح میں گزشتہ 16 سال سے کالعدم ٹی ٹی پی کے ساتھ وابستہ رہا۔

گرفتار دہشتگرد نے بتایا کہ ان حملوں میں قانون نافذ کرنے والے اداروں اور عوام کا جانی اور مالی نقصان ہوا، میں کالعدم ٹی ٹی پی کے اندر مختلف عہدوں کے اندر کام کرتا رہا ہوں، مجھے 2020 میں تحصیل شوال شمالی وزیرستان کا کمشنر بنایا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ میں نے اس دوران براہ راست دہشت گردی کی کارروائیوں میں حصہ لیا اور ضرب عضب کے دوران پاکستان فرار ہوگیا اور وہاں پکتیکا میں رہنے لگا، ان 16 سالوں میں نے پاکستان کی سیکیورٹی اداروں کے خلاف دہشت گردانہ کارروائی میں حصہ لیا، میں نے شمالی وزیرستان، ڈیرہ اسماعیل خان، اور پاک افغان بورڈر میں پاک فوج کے مختلف پوسٹس پر کئی حملوں میں حصہ لیا جن میں چغملئی چیک پوسٹ، زندہ سر پوسٹ، غر لمائی پوسٹ، اکما لا سر پوسٹ، زنگارا، مادی نارئی پوسٹ، مکین روڈ پو قافلے پر حملہ اور ماروبی چیک پوسٹ پر حملہ شامل ہے۔

گرفتار دہشت گرد کمانڈر نصر اللّٰہ کا کہنا ہے کہ اپنی گزشتہ زندگی اور ٹی ٹی پی خوارج سے وابستگی پر نادم ہوں، اللّٰہ اور ان تمام لوگوں سے معافی چاہتا ہوں جنہیں میرے نام نہاد جہاد سے نقصان پہنچا۔ویڈیو بیان میں گرفتار دہشت گرد کمانڈر نصر اللّٰہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ بہت سے ’گمشدہ‘ لوگ افغانستان میں موجود ہیں، پاکستان مخالف دہشت گرد افغانستان میں آزاد گھومتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »