//

جماعت اسلامی نے میئر کراچی مرتضیٰ وہاب کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کر دی۔

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب:جماعت اسلامی نے میئر کراچی مرتضیٰ وہاب کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کر دی۔سندھ ہائی کورٹ میں بجلی کے بلوں کے ذریعے میونسپل ٹیکس وصولی کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی.جماعت اسلامی کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ میئر کراچی نے کمیٹی کے قیام اور کونسل سے منظوری کا بیان حلفی جمع کرایا، عدالتی حکم اور جاری کیے گئے بیان پر عمل نہ کر کے میئر کراچی نے توہین عدالت کی۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ میئر کراچی نے 300 یونٹ سے کم بجلی استعمال والے صارفین پر ٹیکس نہ لگانے کی یقین دہانی کرائی تھی، میونسپل کمشنر نے 31 مئی کو کمیٹی کے قیام کا نوٹیفکیشن جاری کیا، کمیٹی کے سربراہ میئر تھے اور 8 اراکین کو کمیٹی کا حصہ بنایا گیا تھا، 3 جون کو پہلی میٹنگ میں تحریک انصاف کے پارلیمانی لیڈر کا تنازع سامنے آیا، پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر نے تنازع حل کر کے اگلے روز میٹنگ کی یقین دہانی کرائی، پی پی پارلیمانی لیڈر کی یقین دہانی کے باوجود اسی روز میئر کراچی نے پی پی ارکان کے ساتھ ملاقات کی۔جماعت اسلامی نے درخواست میں کہا کہ 10 جون کو سٹی کونسل کے اجلاس میں میونسپل ٹیکس کا معاملہ ایجنڈے میں نہیں تھا، اجلاس سے چند منٹ پہلے میونسپل ٹیکس کا معاملہ ضمنی ایجنڈے کے ذریعے شامل کیا گیا، گنتی کے بغیر ہی میئر کراچی نے قرارداد منظوری کا اعلان کردیا، عدالتی احکامات پر عمل نہ کرنے پر میئر کراچی توہین عدالت کے مرتکب ہوئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »