//

سرفراز بگٹی اور احسن اقبال کی ملاقات، بلوچستان کے 29 ہزار ٹیوب ویلز کیلئے شمسی توانائی پر کام کرنے کا فیصلہ

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب وزیراعلیٰ بلوچستان میر سرفراز بگٹی وفاق میں بلوچستان کے عوام کی ایک مضبوط اور توانا ئی آواز بن کر صوبے کو درپیش مسائل کے حل کے لئے بھرپور انداز سے سر گرم عمل ہیں ، وزیراعلیٰ نے منگل کے روز اسلام آباد میں بلوچستان کے زرعی ٹیوب ویلز کے مسائل حل کرنے کے لئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال سے وفد کے ہمراہ ملاقات کی اس موقع پر فیصلہ کیا گیا کہ بلوچستان کے 29 ہزار رجسٹرڈ ٹیوب ویلز کے لیے متبادل حل کے طور پر شمسی توانائی پر تبدیلی کے لیے اقدامات پر کام کیا جائے گا

اس موقع پر پاور ڈویڑن کی جانب سے وزیراعلیٰ بلوچستان کو دی جانے والی بریفنگ میں بتایا گیا کہ بلوچستان میں 11 ہزار سے زائد غیر قانونی زرعی بجلی کے کنکشن بھی موجود ہیں اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان محمد شہباز شریف نے بھی بلوچستان کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی ہدایت کی ہے ملاقات میں بلوچستان کے زرعی ٹیوب ویلز کی سولر پر منتقلی کے لیے درمیانی وقت میں بجلی کی فراہمی کے لیے بھی پاور ڈویڑن سے بات چیت کی گئی ۔

وزیراعلیٰ بلوچستان میر سرفراز بگٹی نے حکومت بلوچستان کی جانب سے پاور ڈویژن کے ساتھ مل کر بجلی کی فوری بحالی کے لیے اقدامات کی پیشکش کی وفاقی وزیر توانائی سردار اویس لغاری نے بلوچستان حکومت سے بجلی چوری روکنے کے لیے ملکر کام کرنے کی درخواست کی وزیراعلیٰ بلوچستان نے وزیر توانائی اویس لغاری کو بلوچستان کے دورے کی دعوت دیتے ہوئے اس ضمن میں اپنے مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان میں بجلی چوری کے خلاف مہم کو از سرنو شروع کیا جائے گا ملاقات میں فیصلہ کیا گیا کہ چیف سیکرٹری بلوچستان، ایڈیشنل سیکرٹری فنانس اور پاور سیکرٹری کی سربراہی میں ایک کمیٹی کام کرے گی جو دو دن کے اندر قابل عمل میکنزم وضع کرے گی ۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »