//

جامعہ بلوچستان کے اساتذہ اور عملے کو تنخواہوں کو فوری ادائیگی کی جائے، سیاسی جماعتوں کی دھرنا کیمپ میں اظہار یکجہتی

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب : جوائنٹ ایکشن کمیٹی جامعہ بلوچستان کے زیراہتمام پچھلے چار مہینوں کی تنخواہوں اور پنشنز و ریسرچ سینٹرز کے اساتذہ اور ملازمین کو سالانہ بجٹ میں اعلان شدہ 35 فیصد اور دیگر منطور شدہ الاونسز کی عدم ادائیگی کے خلاف ماہ مقدس کے تئیسویں روز بھی جامعہ بلوچستان کے مین گیٹ کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا.

احتجاجی کیمپ میں نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ممبر صوبائی اسمبلی رحمت صالح بلوچ، خیرجان بلوچ اور جماعت اسلامی کے سابقہ صوبائی امیر و کوئٹہ ڈیولپمنٹ فورم کے چیئرمین عبدالمتین اخونزادہ نے شرکت کی۔

دھرنے سے شاہ علی بگٹی، رحمت صالح بلوچ خیرجان بلوچ، عبدالمتین اخونزادہ، پروفیسر ڈاکٹر کلیم اللہ بڑیچ، نذیراحمدلہڑی ، فریدخان اچکزئی، گل جان کاکڑ پروفیسر ارسلان شاہ، نعمت اللہ کاکڑ، سید شاہ بابر، اور اسحاق پرکانی نے خطاب کیا اس موقع پر رحمت صالح بلوچ نے کہا کہ جامعہ بلوچستان کو درپیش سخت مالی بحران دراصل اٹھارویں ترمیم کے بعد وفاقی حکومت سے تمام اثاثہ جات کے ساتھ صوبائی ایچ ای سی کے قیام نا کرنے کی وجہ سے اور صوبائی حکومت کو ہر حال میں فوری طور پر جامعہ بلوچستان کو پچھلے چار مہینوں کی تنخواہوں اور پنشنز کےلئے رقم جاری کرنا ہے ، ممبر صوبائی اسمبلی خیرجان بلوچ نے کہا کہ ترقی کا راز صرف اور صرف تعلیم خاص کر یونیورسٹی کی تعلیم پر انویسٹ کرنا ہے ، ہمارا صوبہ معدنی و قدرتی وسائل سے مالا مال لیکن بدقسمتی سے جامعہ بلوچستان کے اساتذہ کرام اور ملازمین اپنے بنیادی حق ماہانہ تنخواہوں اور پنشن سے محروم ہیں،.

عبدالمتین اخونزادہ نےکہا کہ جامعہ بلوچستان کے اساتذہ کرام اور ملازمین پچھلے کئی سالوں سے تنخواہوں اور پنشنز سے محروم ہیں لیکن ارباب اختیار خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں اور وعدے کرکے مکر جاتے ہیں۔ انہوں نےکہا کہ جامعہ بلوچستان کو فوری طور پر عیدالفطر سے پہلے گزشتہ چار مہینوں و پینشنز کےلئے رقم جاری کیا جائے۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے عہدیداران نے کہا کہ وزیر اعلی بلوچستان و صوبائی اسمبلی پر مشتمل پارلیمانی کمیٹی کے ممبران سے امید ہیں کہ وہ اپنے وعدے کے پاسداری کرتے ہوئے گزشتہ چارمہینوں کی تنخواہوں اور پنشنز کےلئے رقم جاری کرینگے کیونکہ جامعہ کے اساتذہ کرام اور ملازمین سخت تشویش اور ذہنی کوفت میں مبتلا ہیں۔ مقررین نے اعلان کیا کہ 4 اپریل بروز جمعرات کو بھی جامعہ بلوچستان کے مین گیٹ کے سامنے تنخواہوں اور پنشنز کی ادائیگی کے لئے احتجاجی کیمپ میں دھرنا دیا جائے گا اور تمام اساتذہ کرام، آفیسران و ملازمین سے بھرپور شرکت کی اپیل کرتی ہے۔

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »