//

ڈومیسٹک کی پرفارمنس پر میرا نام کیمپ میں بھی آیا،امید ہےآگےموقع ملےگا،حمد شہزاد

Facebook
Twitter
LinkedIn
WhatsApp

وش ویب:کرکٹر احمد شہزاد کا کہنا ہے کہ انہیں سیاست نہیں آتی، وہ سیاست میں بہت برے ہیں۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احمد شہزاد کا کہنا تھا کہ ڈھائی تین سال سے مسلسل ڈومیسٹک کرکٹ کھیل رہا ہوں، ملک کے لیے میری پرفارمنس سب کے سامنے ہے لیکن قومی ٹیم اور پی ایس ایل میں میرا نام نہیں آیا۔
احمد شہزاد نے کہا کہ میں نے محنت جاری رکھی اور رواں سیزن میں میری پرفارمنس بہت شاندار رہی۔ ڈومیسٹک کی پرفارمنس پر میرا نام کیمپ میں بھی آیا، اب امید کر رہا ہوں آگے مجھے موقع ملےگا۔
ان کا کہنا تھا کہ جب آپ ایک بار کیمپ میں آجاتے ہیں تو پھر آپ 20 رکنی اسکواڈ کا حصہ بن جاتے ہیں۔ میں امید کر رہا ہوں کہ مجھے پورا موقع دیا جائےگا۔
احمد شہزاد نے کہا کہ ٹاپ آرڈر میں ابھی بھی بہت کچھ ٹھیک ہونے والا ہے۔ میں ہمیشہ ٹاپ آرڈر میں ہی کھیلا ہوں۔ ہم اب بھی اسٹرائیک ریٹ اور اٹیکنگ کھیل کی بات کرتے ہیں۔ ہم مختلف کمبینیشن اور ماڈرن ڈے کرکٹ پر بھی سوچتے ہیں۔
انہوں نےکہا کہ جہاں تک مڈل آرڈر کی بات ہے تو آپ پاکستان کے لیے کچھ بھی کرنےکو تیار ہوتے ہیں، ضروری یہ ہوتا ہےکہ آپ کے ساتھ بیٹھ کر پلان تیار کیے جائیں۔
احمد شہزاد کا کہنا تھا کہ اسکواڈ میں واپسی کے لیے ڈومیسٹک میں پرفارم کرنا پڑتا ہے جو میں کر چکا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ 20 کھلاڑیوں میں نام آنے کے بعد مجھے آگے موقع ملےگا۔
انہوں نے کہا کہ وہاب ریاض سے ڈومیسٹک ٹی 20 کے دوران رابطہ ہوا تھا، انہوں نےکہا کہ پی ایس ایل میں نہیں ہوں گے تو آپ کی ڈومیسٹک کی پرفارمنس کو دیکھا جائےگا۔
احمد شہزاد نےکہا کہ پی ایس ایل کی ایک دو پرفارمنس پر ٹیم میں شامل کرنا کھلاڑی اور ٹیم کے ساتھ زیادتی ہے۔
چیئرمین پی سی بی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے احمد شہزاد نے کہا کہ چیئرمین محسن نقوی کے لیے بہت چیلنجز ہیں، وہ نگران وزیر اعلیٰ کے طور پر مثبت کام کر چکے ہیں۔ چیئرمین نے میرٹ کی بات کی ہے جو کہ بہت اچھی چیز ہے.

متعلقہ خبریں

اپنا تبصرہ لکھیں

Translate »