اتوار , دسمبر 17 2017
Home / بین الاقوامی / سانحہ لاس ویگاس،امریکی صدر کا پرچم سرنگوں رکھنے اعلان

سانحہ لاس ویگاس،امریکی صدر کا پرچم سرنگوں رکھنے اعلان

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے لاس ویگاس واقعے کے سوگ میں امریکی پرچم کو سرنگوں کرنے کا اعلان کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے لاس ویگاس واقعے کے سوگ میں امریکی پرچم کو سرنگوں کرنے کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاس ویگاس حملہ بدترین واقعہ اور شیطانی عمل ہے، پولیس نےمعجزانہ طورپر کئی لوگوں کو بچایا۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ بدھ کو لاس ویگاس کادورہ کریں گے۔ امریکی شہر لاس ویگاس میں فائرنگ کے واقعے میں 59سے زائد افراد ہلاک اور 500 زخمی ہوگئے، فائرنگ کرنے والے نے خود کو گولی مار کر ہلاک کر لیا۔

لاس ویگاس کے کنسرٹ میں میوزک انجوائے کرتے ہوئے افراد پر قیامت ٹوٹ پڑی، ملحقہ ہوٹل کی بتیسویں منزل سے ایک جنونی نے ہنستے گاتے لوگوں پر گولیاں برسا دیں۔ فائرنگ ہوتے ہی کنسرٹ میں بھگدڑ مچ گئی، لوگوں نے جان بچانے کیلئے اندھا دھند بھاگنا شروع کردیا۔ فائرنگ کے بعد ہوٹل بند کردیا گیاجبکہ لاس ویگاس کے انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر پروازیں روک دی گئیں۔

ہوٹل کی تلاشی شروع ہوئی تو فائرنگ کرنے والے نے پولیس کے پہنچنے سے پہلے ہی خود کو گولی مار کر ہلاک کر لیا۔ حملہ آور کی شناخت 64سالہ مقامی شخص اسٹیفن پڈوک کے نام سے ہوئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ حملہ آور اکیلا تھا، اس نے تین روز پہلے ہوٹل میں کمرہ لیا تھا، حملہ آور کے پاس دس سے زائد بندوقیں موجود تھیں۔

پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ حملہ آور کا کسی دہشت گرد تنظیم سے تعلق نہیں ملا۔ ادھر داعش نے لاس ویگاس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ حملہ داعش کےخلاف فوجی آپریشنزکا ردعمل ہے۔ داعش کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ لاس ویگاس حملہ ہمارے جنگجو نےکیا،حملہ آور نے کچھ ماہ پہلے ہی اسلام قبول کیا تھا۔

About Web Desk

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے